سیاست عمران خان کے بس کاروگ نہیں ، کپتان کو مفید مشورہ دیدیا

اسلام آباد: وفاقی وزیر ریلوے خواجہ سعد رفیق نے کہاہے کہ پی ٹی آئی نے برادر ملک ترکی کے صدر کے اعزاز میں ہونے والے مشترکہ اجلاس کا بائیکاٹ کرکے ثابت کردیا کہ سیاست عمران خان کے بس کا روگ نہیں. وہ کرکٹ کی کوچنگ ہی کریں تو بہتر ہے. پاکستان کے دیرینہ دوست ملک ترکی کے منتخب صدر رجب طیب اردگان ہمارے ملک میں موجود ہیں اور پارلیمنٹ کا مشترکہ اجلاس بھی ہے. لیکن پی ٹی آئی نے مشترکہ اجلاس کا بائیکاٹ کرکے دنیا کو غلط پیغام دیا. عمران خان اور ان کی جماعت کی قومی ذمہ داری تھی کہ وہ برادر ملک ترکی کے سامنے تقسیم کا پیغام نہ بھیجتے .لیکن انہوں نے یہ اقدام اٹھا کر ثابت کردیا کہ سیاست عمران خان کے بس کا روگ نہیں وہ جاکر کرکٹ کی کوچنگ کریں تو بہترہوگا ۔ اسلام آباد میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے وفاقی وزیر سعد رفیق نے کہاکہ عمران خان کا یہ تاثرغلط ہے کہ جوائنٹ سیشن سے نواز شریف کو کوئی فائدہ ہوگا۔ مشترکہ اجلاس سے صرف پاکستان مضبوط ہوگا۔ پی ٹی آئی جواب دے کہ وہ مشترکہ اجلاس کا بائیکاٹ کرکے کس دل ٹھنڈا کررہی ہے اور ان کے سربراہ کس کے لئے کام کرر ہے ہیں۔ خواجہ سعد رفیق کا کہنا تھا کہ پارلیمنٹ کسی ایک فرد کی نہیں بلکہ پوری قوم کی ہے۔ اسی میں تحریک انصاف کی 34 سیٹیں ہیں. عمران خان کی جانب سے کبھی پارلیمنٹ کو جعلی کہا جاتا ہے اور کبھی اس پارلیمنٹ میں جاکر بیٹھ جاتے ہیں، اس پارلیمنٹ کی تنخواہیں بھی لیتے ہیں اور اعزازیئے میں بھی شریک ہوتے ہیں. لیکن پھر اس کی کارروائی میں بھی شریک نہیں ہوتے۔ عمران خان بتائیں کہ وہ پاکستانیوں کےلئے کام کررہے ہیں یا لندن میں مقیم اپنے یہودی رشتہ داروں کے لئے اور کس لابی کو خوش کیا جارہا ہے۔ وفاقی وزیر نے کہا کہ کچھ عرصہ قبل بھی کشمیریوں کے ساتھ اظہار یکجہتی کا جوائنٹ سیشن ہوا .جس میں عمران خان نے آنے سے انکار کردیا. اس وقت پورے بھارتی میڈیا نے دنیا بھر میں ہماری تضحیک کی اور کہا کہ پاکستانی تو خود ہی کشمیر کے مسئلے پر یکجا نہیں.عمران خان بتائیں کہ کشمیر کاز سے کس کا ذاتی تعلق یا مفاد پنہاں ہے اور کشمیر کے مسئلے پر کون سی ذاتی رنجش ہے۔ کشمیر کے مسئلے پر پوری قوم ایک جانب اور عمران خان ایک طرف کھڑے ہیں۔ ان کا کہنا تھا کہ عمران خان لوگوں سے معافیاں منگواتے ہیں اور خود معافی بھی نہیں مانگتے اور نا ہی وضاحت دیتے ہیں۔ سپریم کورٹ کی کارروائی کے حوالے سے خواجہ سعد رفیق کا کہنا تھا کہ ہمیں ملک کی اعلیٰ عدلیہ پر پورا اعتماد ہے اور یقین ہے کہ ہم یہاں سے بھی سرخرو ہوکر نکلیں گے جبکہ جلن، حسد اور جھوٹ کا شکار ہمارے مخالفین کا مقدر شکست بنے گی ۔ انہوں نے کہا کہ حامد خان نے عدالت میں وزیراعظم کا موقف پیش کیا ہے۔ عمران خان عدالت تو چلے گئے ہیں. مگر ان کے پاس کوئی ثبوت نہیں۔ ہم عدالت سے سرخرو ہو کر نکلیں گے ۔ وزیراعظم نواز شریف کی تینوں تقریروں میں کوئی تضاد نہیں ہے ۔

Facebook Comments