بھارت تحمل کو کمزوری نہ سمجھے، امریکا کے ساتھ مل کر کام کرنا چاہتے ہیں، نواز شریف

اسلام آباد  وزیر اعظم نواز شریف نے کہا ہے کہ پاکستان تر نوالہ نہیں‘ بھارت ہمارے صبرو تحمل کو کمزوری نہ سمجھے‘ پا کستان کو ان حر بوں سے مرعوب نہیں کیا جا سکتا کیونکہ کسی بھی حملہ کے خلاف ہم اپنی سر زمین کے دفاع کی مکمل صلا حیت رکھتے ہے‘چپے چپے کی حفاظت کرناجانتے ہیں‘پاک فوج کسی بھی جارحیت کا بھرپورجواب دیگی‘بھارتی فورسز کی جانب سےلائن آف کنٹرول پر کشیدگی میں ا ضافہ علاقائی امن اور سلا متی کیلئے خطرہ ہے‘بھاتی حکام کی جانب سے مقبو ضہ کشمیر کے نہتے اور بے گناہ شہر یوں پر بد ترین مظا لم سے دنیا کی توجہ ہٹا نے کی لا حاصل کوشش ہے‘پاکستان نئی امریکی حکومت کے ساتھ ملکرکام کرناچاہتاہے۔انہوں نے یہ بات وزیر اعظم ہائوس میں منعقدہ اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہی جس میں لائن آف کنٹرول پر بگڑتی ہوئی صو ر تحال پر غور کیا گیا۔ وزیر اعظم نے اقوام متحدہ پر زور دیا کہ وہ ایل او سی پر سیز فائر کی خلاف ورزیوں  اور دو نوں ملکوں کے در میان بلا جواز کشیدگی کا نوٹس لے ‘ انہوں نے کہا کہ ہماری مسلح افواج فائر کرنے میں پہل نہیں کرتیں لیکن وہ کسی بھی جارحیت کا ہمیشہ بھرپور انداز میں جواب دیں گی۔