ملک کا اہم ترین عہدہ خالی، مسلم لیگ ن کے بڑے بڑے رہنماﺅں میں دوڑ لگ گئی

اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک ) وزیر اعظم کے انسپیکشن کمیشن کے چیئرمین آج ریٹائر ہو رہے ہیں اور اب اس عہدے پر تعیناتی کیلئے حکمران جماعت کے اہم رہنماﺅں سمیت سابق ججز نے کوششیں شروع کر دی ہیں ۔ ایکسپریس ٹریبیون کے مطابق پرائم منسٹر کے انسپیکشن کمیشن (پی ایم آئی سی ) کے چیئرمین عامر محمد خان مروت آج ریٹائر ہو رہے ہیں تاہم مبینہ طور پر سیاسی بنیادوں پر اپوزیشن رہنماﺅں کیخلاف انکوائریاں شروع کرنے کے حوالے سے اس متنازع عہدے پر تعیناتی کیلئے وزیر اعظم ہاﺅس کے زیر غور کئی اہم نام ہیں ۔لیگی ذرائع کا کہنا ہے کہ وزیرا عظم نوازشریف پی ایم آئی سی چیئرمین کو توسیع دینے کے حق میں نہیں ہیں لہذٰا یہ عہدہ پارٹی کے کسی اہم رہنما یا با اعتبار سابق جج کو دیا جائے گا کیونکہ اس حوالے سے مسلم لیگ نواز کے کئی اہم رہنماﺅں کے نام زیر غور ہیں جن میں بعض ایم این اےز بھی شامل ہیں ۔ذرائع نے مزید بتایا کہ لیگی رہنماﺅں میں دانیال عزیز ، طلال چودھری ، سینیٹر مشاہد اللہ خان اور عائشہ رضا فاروق کے ساتھ ساتھ سابق جج احمد فاروق شیخ اور خواجہ شریف کے نام زیر غور ہیں مگر ابھی تک کوئی حتمی فیصلہ نہیں کیا گیا تاہم یہ بھی ممکن ہے کہ وزیراعظم فوری طور پر پی ایم آئی سی چیئرمین کو تعینات نہ کریں ۔