بھارتی فوج کی خوش گمانی ،مودی کوایسامشورہ دیدیاکہ خطے میں خطرے کی گھنٹی بجادی

نئی دلی(مانیٹرنگ ڈیسک) گزشتہ روز مقبوضہ کشمیر کے اڑی سیکٹر میں فوجی ہیڈ کوارٹر پر حملے کے بعد اپنی خود ساختہ طاقت کے گمان میں مبتلا بھارتی فوج نے مودی سرکار کو پاکستان کی حدود میں محدود پیمانے پر حملوں کا مشورہ دے دیا ہے۔ایک نجی ٹی وی کے مطابق گزشتہ روز مقبوضہ کشمیر کے اْڑی سیکٹر میں قائم فوجی ہیڈ کوارٹر پر حملے میں 17 اہلکاروں کی ہلاکت کے بعد کسی تفتیش کے بغیر ہی بھارت سارا الزام پاکستان پر ڈال رہا ہے حالانکہ بھارتی میڈیا کے مطابق انٹیلی جنس اداروں نے اس قسم کے حملے کا خدشہ کئی روز قبل ہی ظاہرکردیا تھا لیکن اس کے باوجود بھارت اپنی غلطی نہ ماننے کی روش اختیار کئے ہوئے ہے اور بھارتی فوج تو اس حد تک آگے بڑھ چکی ہے کہ اس نے مودی سرکار کو پاکستان کی حدود میں محدود پیمانے پر حملوں کی تجویز پر غور کرنے کا بھی کہہ ڈالا ہے۔ دفاعی حکام نے کہا ہے کہ بھارت کی دفاعی حکمت عملی پاکستان کو شہہ دیتی ہے اور اس کا نتیجہ ممبئی حملے اور پٹھان کوٹ ایئربیس پر دہشت گردی کی صورت میں نکلتا ہے۔اپنی طاقت کے حوالے سے خوش گمانی میں مبتلا بھارتی فوج اڑی حملے کے بعد لائن آف کنٹرول پر کشیدگی میں اضافہ کرنا چاہتی ہے۔ اس سلسلے میں بھارتی فوج اور وزارت دفاع کے اعلیٰ حکام نے مودی سرکار کو تجویز دی ہے کہ لائن آف کنٹرول سے متصل پاکستانی علاقوں اور آزاد کشمیر میں گھس کر محدود پیمانے پر کارروائی کی جائے تاہم بھارتی حکومت کو اس حقیقت کا پوری طرح ادراک ہے کہ اس طرح کی کسی بھی کارروائی کی صورت میں مکمل جنگ شروع ہونے میں وقت نہیں لگے گا۔ مودی سرکار نے لائن آف کنٹرول پر موجود سیکیورٹی فورسز کو مکمل تیار کرنے کا حکم دے دیا ہے ، اس کے علاوہ پاکستان سے متصل سرحدوں کے قریب واقع بھارتی فضائی اڈوں پر تعینات عملے کو بھی الرٹ کردیا ہے۔ اس سلسلے میں بھارتی فوج پاکستان کی حفاظتی چوکیوں اور دیگر تنصیبات پر بھاری گولہ باری کی جاسکتی ہے۔عالمی ماہرین نے کہاہے کہ اگربھارتی فوج نے وزیرمودی کومحدودجنگ کامشورہ دیاہے تویہ بھارتی فوج کی خوش گمانی ہے کیونکہ پاکستان کے پاس بھار ت سے زیادہ جدید ٹیکنالوجی ہے ۔اوراس سے خطے کاامن خطرے میں پڑجائے گا

Tags: