مجھے قتل کیا گیا تو ذمہ دار الطاف حسین ہوں گے، عامر لیاقت حسین

 کراچی: ایم کیوایم کے سابق رہنما عامرلیاقت حسین نے کہا ہے کہ مجھے دھمکیاں دی جارہی ہیں اور اگر مجھے قتل کیا گیا تو ذمہ دار الطاف حسین ہوں گے۔ایم کیوایم کے سابق رہنما عامر لیاقت حسین نے کہا ہے کہ پارٹی چھوڑنے کے بعد مجھے قتل کی دھمکیاں دی جارہی ہیں اور اگر مجھے قتل کیا گیا تو اس کے ذمہ دار ایم کیو ایم کے قائد الطاف حسین ہوں گے۔ انہوں نے کہا کہ کراچی میں جو ہنگامے ہورہے تھے میں ان کو روکنے کی کوشش کررہا ہوں لیکن یہ احسان فراموش لوگ ہیں، میں اس قوم کے لیے لڑتا رہا لیکن مجھے فون پر بوریوں کی دھمکیاں دی جارہی ہیں۔عامر لیاقت کا کہنا تھا کہ مجھے نامعلوم نمبروں سے آنے والے فون پر کہا جارہا ہے کہ تم مصطفیٰ کمال سے بھی بڑے غدار ہو اور تمہارا حال اس سے بھی برا ہوگا۔ انہوں نے کہا کہ میں مہاجروں کے لیے لڑتا رہا لیکن یہاں مہاجر کا کوئی مسئلہ نہیں، میں گزشتہ 3 ماہ سے صرف بے وقوف بنتا رہا اور الطاف حسین کی ناقابل برداشت باتیں سنتا رہا۔سابق متحدہ رہنما کا کہنا تھا کہ دعا کرتا ہوں کاش کہ فاروق ستار الطاف حسین اور اس پارٹی سے دوری اختیار کرلیں اور اگر وہ وطن سے مخلص ہیں تو ابھی پریس کانفرنس کریں اور کہیں کہ الطاف حسین سے ہمارا کوئی واسطہ نہیں۔ عامر لیاقت نے کہا کہ ایم کیوایم پاکستان کچھ بھی نہیں ہے یہ سب گیم پاناما لیکس کو بچانے کے لیے کیا جارہا ہے۔واضح رہے کہ الطاف حسین کے پاکستان خلاف بیان کے بعد ڈاکٹر عامر لیاقت نے ایم کیو ایم چھوڑنے کا اعلان کیا تھا۔