سپریم کورٹ؛وزیراعظم کا کابینہ کو بائی پاس کرنے کا اختیارکالعدم

اسلام آباد(نیوزڈیسک) سپریم کورٹ نے وزیراعظم کا کابینہ کو بائی پاس کرنے کا اختیار کالعدم قراردے دیا۔سپریم کورٹ نے موبائل امپورٹرز کی درخواست پر اضافی ٹیکس کا نفاذ غیر قانونی قرار دے دیا۔ ۔عدالت نے موبائل فون کمپنیوں اور ٹیکسٹائل مصنوعات پرلیوی ٹیکس میں اضافے کا نوٹیفکیشن بھی کالعدم قرار دیدیا۔عدالت نے قرار دیا کہ ٹیکس میں اضافے یا کمی کا اختیار وفاقی حکومت کو ہے۔ وزیراعظم، وزیر یا سیکرٹری اکیلے وفاقی حکومت کا اختیار استعمال نہیں کر سکتے۔ ایسا کرنا غیرآئینی ہے۔عدالت نے قرار دیا کہ بجٹ اور صوابدیدی اخراجات کی منظوری صرف کابینہ دے سکتی ہے۔ کابینہ کو قانون سازی سے قبل جائزے کے لیے مناسب وقت دیا جائے۔فیصلے میں کہا گیا کہ کابینہ کی منظوری کے بغیر جاری ہونے والا آرڈیننس غیر آئینی ہوگا۔ وزیراعظم اپنے طور کسی آرڈیننس یا ایکٹ کی منظوری نہیں دے سکتے۔سپریم کورٹ نے مزید کہا کہ کوئی بھی بل کابینہ کی منظوری کے بغیر پارلیمنٹ میں پیش نہیں ہو سکتا۔ وزیراعظم کو اختیار نہیں کہ کابینہ کو بائی پاس کریں۔عدالت نے وزیراعظم کو اختیار دینے والا رولز سولہ دو بھی کالعدم قرار دے دیا۔

Facebook Comments