معاون خصوصی برائے خارجہ امورطارق فاطمی نے ذوالفقارعلی پھانسی رکوانے میں اہم کرداراداکیا

اسلام آباد(نیوزڈیسک)وزیراعظم کی خصوصی ہدایات پر معاون خصوصی طارق فاطمی کی سفارتی کوششیں رنگ لائیں اور ذولفقار علی کی سزائےموت پر عمل درآمد روک دیا گیا۔ انڈونیشیامیں سفیرپاکستان عاقل ندیم کاکہناہےکہ انکوائری کمیٹی نےاپنی رپورٹ میں کہاتھا کہ ٹرائل میں بہت ساری غلطیاں ہوئی ہیں۔مریم نوازکہتی ہیں کہ کیس پیچیدہ تھا،سزاپرعمل رکنے پرخوشی ہوئی ہے۔ انڈونیشیامیں بےجرم پھانسی کاسامناکرنےوالے ذوالفقارکی زندگی بچنےپرملک بھرمیں لوگوں نےسکھ کاسانس لیاہے۔وزیر اعظم نواز شریف نے ذولفقار علی کی پھانسی رکوانے کے لیے ذاتی دلچسپی لی تھی اوراپنےمشیرطارق فاطمی کوہدایت کی تھی کہ چاہے کچھ بھی کرنا پڑے ایک بےگناہ پاکستانی کو پھانسی گھاٹ سے زندہ واپس لانا ہے۔جکارتہ میں سفیرپاکستان عاقل ندیم کاکہناتھاکہ یہ کوششیں بلاخررنگ لےآئیں ہیں۔انڈونیشیامیں جمعرات کی شب چودہ اسمگلرزکوپھانسی دی جانی تھی تاہم چار کی پھانسی پر عمل در آمد ہوا اور دس کی پھانسی پر عمل درآمد روک دیاگیا ہے۔ خوش نصیبوں میں ذولفقار علی کا بھی شامل ہونااس بات کااظہارہےکہ بروقت کوشش کی جائےتوکئی ناممکن کام بھی ممکن ہوجاتےہیں۔ جبکہ ذرائع کاکہناہے کہ ذوالفقارعلی کی کوپھانسی تک پہنچانے میں بھارت کاکردارہے اوربھارت نے ایک مسلمان ملک کوپاکستان سے دورکرنے کےلئے یہ گھناﺅناکھیل کھیلالیکن پاکستانی دفترخارجہ نے یہ کھیل ناکام بنادیا۔ادھرذوالفقارعلی کے اہل خانہ کاکہناہے کہ اگرذوالفقارمنشیات کادھندہ کرتاتوپھرہم کسی پوش علاقے میں رہتے اورامیرہوتے جبکہ ہم توغریبوں کی بستی میں رہ رہے ہیں ۔