مراد شاہ وزیر اعلیٰ کیسے بنیں گے، پارٹی رہنماء نمبر گیم سے پریشان

کراچی(نیوزڈیسک)سندھے کے نئے سربراہ کو اعتماد کے ووٹ کیلئے اپوزیشن کی ضرورت بھی پڑ سکتی ہےاوراپوزیشن میں سب سے بڑی جماعت ایم کیوایم ہے ۔ مراد علی شاہ نے رابطے تیز کر دیئے، نمبر گیم پیچیدہ بھی ہو سکتی ہے۔ – سندھ اپنے نئے سربراہ کا منتظر ہے۔ پیپلز پارٹی نے مراد علی شاہ کو نامزد کر دیا لیکن ان کا منزل مراد پر پہنچنا اتنا بھی آسان نہیں۔ اعتماد کے ووٹ کیلئے انہیں اپوزیشن کے ووٹوں کی ضرورت بھی پڑ سکتی ہے۔ نئے وزیر اعلیٰ کا انتخاب ووٹنگ کے ذریعے ہو گا، کامیابی کیلئے پچاسی ارکان کی حمایت ضروری ہے۔ سندھ اسمبلی میں پیپلز پارٹی 91 نشستوں کے ساتھ سرفہرست ہے۔ اپوزیشن کے پاس 74 ارکان ہیں۔پیپلز پارٹی کے چار ارکان شرجیل میمن، اویس مظفر، حسنین مرزا اور طارق آرائیں بیرون ملک ہیں اور ان کی اجلاس میں شرکت بھی مشکوک ہے۔ ناراض ارکان کو سنبھالنا بھی پیپلز پارٹی کا بڑا امتحان ہو گا۔کامیابی کیلئے مراد علی شاہ کی تیاریاں بھی جاری ہیں۔ متوقع وزیر اعلیٰ سندھ نے صورتحال کے پیش نظر اپوزیشن جماعتوں سے رابطے تیز کر دیئے ہیں۔ فنکشنل لیگ کے سربراہ پیر پگاڑا سے ملاقات ہو چکی۔ ایم کیو ایم سے بھی رابطے جاری ہیں۔ مراد علی شاہ کی جلد نائن زیرو آمد بھی متوقع ہے۔